Breaking News
Home / دلچسپ و عجیب / کیا آپ جانتے ہیں کہ شیر کو قدرت نے کتنے جانوروں کی بولی بولنے کی صلاحیت عطا کی ہے ؟ اس کے لعاب دہن میں قدرت نے کیا حیران کن خوبیاں رکھی ہیں ، دلچسپ مگر حیران کن معلومات

کیا آپ جانتے ہیں کہ شیر کو قدرت نے کتنے جانوروں کی بولی بولنے کی صلاحیت عطا کی ہے ؟ اس کے لعاب دہن میں قدرت نے کیا حیران کن خوبیاں رکھی ہیں ، دلچسپ مگر حیران کن معلومات

شیر کا شمار دنیا کے خطرناک ترین جانوروں میں کیا جاتا ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ ایک تحقیق کے نتائج میں “شیر“ ہی کو سب سے پسندیدہ حیوان بھی قرار دیا گیا ہے- اس طاقتور جانور کی کچھ خصوصیات ایسی بھی ہیں جن سے لوگوں کی ایک بڑی اکثریت ناواقف ہے، آئیے جانتے ہیں کہ وہ خصوصیات کونسی ہیں ۔٭شیر گھات لگا کر شکار پہ حملہ کرنا پسند کرتا ہے۔اسی لیے حملے سے قبل انجان انسان شیر کو دیکھ لے،تو عموماً وہ رفوچکر ہو جاتا ہے اوردھاوا نہیں بولتا۔ بھارت کے جن علاقوں میں شیر بستے ہیں،وہاں آج بھی رواج ہے کہ دیہاتی سر کے پیچھے شیر کے چہرے کا ماسک پہنتے ہیں…تاکہ شیر عقب سے حملہ نہ کر سکے۔
٭شیر آنکھ کی گول پتلی (Pupil) رکھتے ہیں۔جبکہ گھریلو بلیوں کی پتلی لمبوتری ہوتی ہے۔ وجہ یہ کہ بلّی عموماً رات کو شکار کرتی ہے۔ جبکہ شیر صبح یا شامbکو دھاوا بولتے ہیں۔٭بلّی کے برعکس شیر رات کو صاف طرح نہیں دیکھ سکتےتاہم پھر بھی ان کی نظر انسان سے چھ گنا زیادہ قوی ہوتی ہے۔٭ ہر شیر اپنےمخصوص جنگلی علاقے یا ریاست میں رہتا ہے۔اس ریاست کی سرحدیں درخت کھرچ کے یا نیز جگہ جگہ پیشاب کرنے سے متعین کی جاتی ہیں۔٭بلّیوں کی مانند شیربھی جلدپہ پٹیاں رکھتے ہیں۔ لہٰذا ان کے سارے بال جھڑ جائیں،تب بھی پٹیاں نظر آتی ہیں۔٭شیرنی کے بچے پیدا ہونے کے بعد ایک ہفتے تک اندھے رہتے ہیں۔ اسی عرصے میں تقریباً آدھ بچہ کسی نہ کسی حادثے کا نشانہ بن کر چل بستا ہے۔٭شیر مختصر فاصلے تک 60 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے بھاگ سکتا ہے۔ نیز شیر20 فٹ (6 میٹر)طویل چھلانگ لگانے پہ قادر ہے۔٭ شکار پھانسنے کے لیے قدرت نے شیر کو یہ صلاحیت بخشی ہے کہ وہ مختلف جانوروں کی بولیاں بول سکتا ہے۔٭شیرکے پنجے کا بھرپور وار اتنا طاقتور ہوتا ہے کہ ریچھ کی کمر پہ پڑے ،تو اسے توڑ ڈالتا ہے۔٭ شیر کے لعابِ دہن میں جراثیم کش مادے پائے جاتے ہیں۔اسی لیے وہ کبھی زخمی ہو جائے، تو زخم چاٹتا رہتا ہے تاکہ اسے جراثیم سے پاک رکھ سکے۔شیر کی زبان متعدد عقبی کانٹے نما چیزوں سے بھری ہوتی ہے جسے پیپلی کہتے ہیں. اسکی مدد سے وہ اپنے شکار کی کھال وغیرہ اتارتا ہے. یہ اتنی تیز ہوتی ہے کہ اگر آپکے ہاتھ پر کچھ دفعہ لگائی جائے تو آپکی جلد جسم سے جُدا ہوجائے گی۔

About admin

Check Also

دو منٹ کا کمال دانتوں پر جما پیلا پن اور گندگی غائب

سگریٹ تمباکو وغیرہ ایسی چیزیں ہیں جس سے ہمارے دانت بہت جلدی سڑنے لگتے ہیں …

Leave a Reply

Your email address will not be published.